Wednesday, 6 November 2013

Baaton Baton Mein Bicharney Ka Ishaara Karkay


Roman Urdu    رومن اردو

Baaton Baton Mein Bicharney Ka Ishaara Karkay
Khud Bhi Woh Roya Bahot Hum Se Kinaraa Karkay

Sochta Rehta Hoon Tanhai Mein Anjaam e Khaloos
Phir Ussi Jurm e Mohabbat Ko Dobaraa Karkay

Jagmagga Dee Hain Tere Shaher Kee Gallian Mein Nay
Apney Har Ashk Ko Palkon Peh Sittara Karkay

Daikh Letey Hain Challo Housla Apney Dill Kaa
Aor Kuchh Roz Terey Sathh Guzzara Karkay

Urdu    اردو

باتوں باتوں میں بچھڑنے کا اِشارہ کرکے
خُود بھی وہ رویا بہت ہم سے کنارہ کرکے

سوچتا رہتا ہوں تنہائی میں انجامِ خلوص
پھر اُسی جُرمِ محبت کو دوبارہ کرکے

جگمگا دی ہیں تیرے شہر کی گلیاں میں نے
اپنے ہر اشک کو پلکوں پہ ستارہ کرکے

دیکھ لیتے ہیں چلو حوصلہ اپنے دل کا
اور کچھ روز تیرے ساتھ گُزارہ کرکے

1 comment:

Advertisement